موبائل فون کے زیادہ استعمال سے جسم کے کسی بھی حصہ میں ٹیومر بن سکتا ہے

واشنکٹن :آج کے دور میں اسمارٹ فون ہمارے زندگی کا لازمی جزو بن گیا ہے۔ لیکن اس کے ساتھ ہی ہم یہ بات بھول گئے کہ ہم اسمارٹ فون کا استعمال اتنا زیادہ کر رہے ہیں کہ ہمارے جسم میں کہیں بھی کینسرکا پھوڑا بن سکتا ہے یہاں تک کہ دل میں بھی ٹیومر بن سکتا ہے ۔ امریکی حکومت کی تازہ ریسرچ میں محققین نے تقریباً 20سالوں تک 160کروڑ روپے خرچ کر کے چوہوں پر اسمارٹ فون کے ریڈیشن سے ہو نے والے تغیرات پر تحقیق کی گئیہے۔
محققین نے پایا ہے کہ اسمارٹ فون سے نکلنے والی ریڈیشن انسانوں کے جسم میں ٹیومر کو جنم دے سکتی ہے۔ محققین نے مذکر ( Male)چوہوں پر موبائل ریڈیشن کا استعمال کر کے یہ پایا کہ ان کے دل کی خلیات (Cells)میں ٹیومر جنم لیتا ہے۔ وہیں محققین نے جب یہی تحقیق مونث( Female) چوہوں پر کی تو ان میں ٹیومر نہیں بنا ۔
اس تحقیق میں شامل کئے چوہوں پر بے حد تیز ریڈیشن ڈالی گئی، جس کے بعد 6فیصد جانوروں میں ’’schwannomas‘کا ٹیومر بن گیا ۔ یہ خاص طرح کا ٹیومر دل کے پاس موجود نرو ٹیشو میں پیدا ہوتا ہے۔ اس تحقیق میں مصروف سائنس داں جان بوچر نے کہا ’ یہ بات سہی ہے کہ ا س سے پہلے بھی فون کی ریڈیشن سے ہونے والے کینسر کا پتہ لگ چکا ہے ، لیکن یہ کان اور دماغ کے پاس پائے گئے تھے۔ اب ٹھیک اسی طرح کا ٹیومر پہلی بار دل کے قریب ملا ہے۔
حالانکہ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ یہ ضروری نہیں کہ جو اثرات چوہوں پر مرتب ہوتے دیکھے گئے ہیں وہی انسانوں پر بھی مرتب ہوں گے ۔واضح رہے کہ یہ نتیجے 3جی اور 2جی فون کے ذریعہ حاصل ہوئے۔ 4جی اور5جی ، الگ فرکونسی پر کام کرتے ہیں اور ان سے نکلنے والی ریڈیشن بھی الگ ہوتی ہے۔

Title: high levels of cellphone radiation linked to tumors in male rats u s study | In Category: صحت  ( health )
Tags: ,