بچپن میں ٹیکے نہ لگوانے سے دنیا بھر میں ہر سال صرف نمونیا سے ہی 12بچوں کی موت ہوجاتی ہے:رپورٹ

کراچی: یہاں ماہرین امراض اطفال کا کہنا ہے کہ بچپن میںحفاظتی ٹیکے نہ لگوانے کے باعث ہر سال 5سال سے کم عمر سینکڑوں بچوں کی موت واقع ہوجاتی ہے۔پاکستان پیڈیاٹرک ایسوسی ایشن اور داؤ یونیورسٹی کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر خالد شفیع نے کہا کہ ہر سال دنیا بھر میں صرف نمونیا سے ہی12لاکھ بچوں کی موت ہوجاتی ہے جبکہ نمونیا قابل علاج بیماری ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ایڈز،تپ دق اور ملیریا سے بھی ہر سال اتنی ہی موتیں واقع ہوتی ہیں اور روٹا وائرس پیٹ کے امراض سے بھی ۵ لاکھ سے زیادہ بچوں کی موت ہوجاتی ہے جنہیں حفاظتی ٹیکوں سے روکا جاسکتا ہے۔
پروفیسر ڈاکٹر خالد شفیع نے کہا کہ ایک رپورٹ کے مطابق گزشتہ کئی سالوں سے 5 سال سے کم عمر17 فیصد بچوں کی موت ایسی بیماریوں سے ہو رہی ہے جنہیں وقت پر حفاظتی ٹیکے نہیں لگوائے جا رہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ویکسی نیشن نہ کی جائے تو یہ چھوٹے امراض وبائی مرض بن کر موت کے باعث بن سکتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کے حفاظتی ٹیکوں سے وبائی امراض میں کافی حد تک کمی آئی ہے۔ ماہرین کے مطابق خسرہ سے ہونے والی موتوں میں75فیصد کمی آئی ہے اور پولیو کی شکایت میں99فیصد کمی ہوئی۔ ڈاکٹر خالد نے کہا کہ1978میں آغاز ہونے والا حفاظتی ٹیکا مہم نے بے شمار جانیں بچائی ہیں اور یہ مہم اب تک جاری ہے جس سے سارے پاکستانیوں کو استفادہ کرنا چاہئیے۔

Title: childhood vaccines what they are and why your child needs them | In Category: صحت  ( health )